پولیس تشدد سے ملزم کی ہلاکت،ڈی ایس پی بالاکوٹ،ایچ ایس اوبالاکوٹ سمیت 4پولیس اہلکار معطل ،مقدمہ درج

ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر مانسہرہ نے بالاکوٹ پولیس کے تشدد سے ملزم کی ہلاکت پر ڈی ایس پی بالاکوٹ اورایس ایچ اوتھانہ بالاکوٹ سمیت چار پولیس اہلکاروں کو معطل کرکے تھانہ بالاکوٹ میں ڈی ایس پی سمیت چار پولیس اہلکاروں کے خلاف مقدمہ درج کروادیا ہے۔بالاکوٹ پولیس نے غلام حسین کو ڈکیتی کے الزام میں گرفتار کیا تھا۔دوران تفتیش پولیس کی تشدد سے ملزم شدید زخمی ہوا۔شدید زخمی ملزم سوموار کے روز ایوب ٹیچنگ ہسپتال میں جاں بحق ہوا۔ملزم کی ہلاکت کے خلاف ملزم کے لواحقین نے نعش سڑک پر رکھ کر شاہراہ ریشم ہرقسم کی ٹریفک کیلئے بند کی۔بدھ کے روز غلام حسین کی نماز جنازہ ادائیگی اورتدفین کے بعد ملزم کے لواحقین نے مسلم لیگ(ن)کے اراکین صوبائی اسمبلی میاں ضیاء الرحمن،سردار ظہور احمد،مولانا عصمت اللہ،ضلع ناظم مانسہرہ سردار سید غلام،جمعیت علماء اسلام کے رہنماء مولانا سید ہدایت اللہ شاہ اوردیگر بلدیاتی نمائندوں کی قیادت میں دوبارہ احتجاج کرتے ہوئے شاہراہ ریشم پر دھرنا دیا۔مظاہرین نے ڈی ایس پی بالاکوٹ ،ایس ایچ اوبالاکوٹ کو معطل کرنے ان کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا مطالبہ کیا ۔روڈ بند ہونے کی اطلاع پر ڈی پی اومانسہرہ احسن سیف اللہ پولیس نفری کے ہمراہ موقع پر پہنچ آئے اورمظاہرین سے طویل مذاکرات کے بعد ڈی ایس پی بالاکوٹ سید مختیار شاہ، ایس ایچ او بالاکوٹ سجاد خان، تفتیشی آفیسر علی اکبر خان اور کانسٹیبل زاہدکو فوری طورپر معطل کرکے ان پولیس افسران اوراہلکاروں کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا۔پولیس افسران اوراہلکاروں کی معطلی اورمقدمہ کے اندراج کے بعد مظاہرین پرامن طورپر منتشر ہوگئے۔